پاکستان نے امریکی سفارتکاروں پرپابندیاں عائد کر دیں۔

امریکا کی جانب سے پاکستانی سفارتکاروں کی نقل وحرکت پرپابندی میں پہل کے بعد پاکستان کی جانب سے بھی منہ توڑ جواب دے دیا گیا۔ پاکستان نے بھی جوابی کارروائی کرتے ہوئے امریکی سفارتخانے کو ہنگامی مراسلہ ارسال کرتے ہوئے پاکستان میں موجود امریکی سفارتکاروں کو دی گئی سہولیات واپس لینے اور ڈپلومیٹک اسٹاف پر پابندیاں عائد کرنے کے فیصلے سے آگاہ کر دیا۔ وزارت خارجہ نے اپنے خط میں امریکی سفارتکاروں پر محدود پابندیاں عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکی سفارتکاروں کی دی گئی خصوصی سہولیات واپس لی جارہی ہیں، امریکی سفارتکاروں کوبھی نقل وحرکت سے پہلے اجازت لینا ہوگی، امریکی سفارتکار پاکستان میں کالے شیشے والی گاڑیاں استعمال نہیں کرسکیں گے جبکہ زیر استعمال گاڑیوں پر اصلی نمبر پلیٹ لگانا لازمی اور کرائے کی گاڑیوں پر ڈپلومیٹ نمبر پلیٹ کااستعمال ممنوع ہو گا۔

خط میں مزید کہا گیا ہے کہ امریکی سفارتکاروں کے لیے بائیومیٹرک تصدیق کے بغیر فون سمز جاری نہیں کی جائینگی،کرایہ کی عمارتوں کے حصول اور تبدیلی کے لیے این او سی لینا بھی ضروری ہوگا،سیف ہاؤسز اورسفارتکاروں کی رہائش گاہوں پر مواصلاتی آلات لگانے کے لیے بھی خصوصی اجزت نامے درکار ہوں گے۔خط کے مطابق آج کے بعد امریکی سفارتکار ایک سے زائد پاسپورٹ بھی نہیں رکھ سکیں گے، امریکی سفارتکاروں کا قیام جاری کیے گئے ویزے کی مدت کے مطابق ہوگا،تمام پاکستانی ایئرپورٹس پر امریکی سفارتکاروں کے سامان کے لیے دی گئی چھوٹ بھی واپس لے لی گئی ہے۔ایئرپورٹس پر آنے والے سامان کی قواعد و ضوابط کے مطابق اسکریننگ اور سخت چیکنگ ہوگی۔

امریکی حکام کو آگاہ کر دیا گیا ہے کہ پاکستانی ائرپورٹس پر امریکی سفارتخانے کے سامان کی ترسیل کو ویاناکنونشن کے مطابق ڈیل کیا جائیگا،وزارت خارجہ نے اپنے خط میں ہدایت کی ہے کہ امریکی سفارتکار پاکستانی اعلٰی حکام اور غیر ملکی سفارتکاروں سے قواعد کے مطابق ملاقاتیں کریں گے

مزید دیکھیں

متعلقہ مضامین