عمران خان کی تیسری شادی کی ناکامی سے متعلق جھوٹا پراپیگنڈا ہو رہا ہے، پی ٹی آئی

عمران خان کی تیسری شادی بھی متنازعہ؟؟؟ سوشل میڈیا پر ایسی افواہیں پھیلانے والوں کے خلاف پی ٹی آئی کا ایکشن
سوشل میڈیا پر پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کی تیسری شادی کو متنازعہ بنانے کی کوششوں کے نتیجے میں تحریک انصاف نے بھی جوابی ایکشن شروع کر دیا،بشری بی بی کی عمران خان سے علیہدگی اور ممکنہ طلاق تک کی خبریں دینے والے قومی اخبار، ویب سائٹس اور چینلز کے خلاف پیمرا، پریس کونسل اور ایف آئی اے سے رجوع کرنے کا اعلان کر دیا۔گزشتہ چند دنوں سے پاکستان کے سوشل میڈیا پر عمران خان کی تیسری شادی کو لے کر افواہوں نے ہل چل مچا رکھی ہے ۔بات سوشل میڈیا تک محدود نہ رہی بلکہ کراچی سے شائع ہونے والے ایک قومی اخبار روزنامہ امت نے عمران خان اور بشری بی بی کے درمیان معاملات کو انتہائی پیچیدہ نوعیت کے بنا کر پیش کیا توقومی اخبار کی اس خبر پر بھارتی میڈیا نے بھی شہ سرخیاں لگائیں اور پھر انہیں بھارتی خبروں کا حوالہ دے کر پاکستان کے سوشل میڈیا پر افواہوں اور من گھڑت خبروں کا طوفان برپا کر دیا گیا۔

صورت حال کے پیش نظر عمران خان اور تحریک انصاف نے بھی خاموشی توڑ دی۔عمران خان کی ہدایت پر تحریک انصاف کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ عمران خان کی ازدواجی زندگی کے بارے میں جھوٹا، منفی اور بے بنیاد پراپیگنڈہ کیا جا رہا ہے۔ انتخابات سے ٹھیک قبل ایک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت چادر چاردیواری اور حرمت انسانی کی تمام حدود پامال کرنے کوشش کی جا رہی ہے۔تحریک انصاف
اس مذموم مہم میں شامل اخبارات ،ویب سائٹس اور و چینلز کیخلاف قانونی کاروائی کرتے ہوئے ایف آئی اے، پیمرا اور پریس کونسل آف پاکستان سے رجوع کرے گی۔

تحریک انصاف نے جھوٹی خبریں چلانے والے اداروں سے مطالبہ کیاہے کہ غیر مشروط معافی مانگیں یا قانونی چارہ جوئی کیلئے تیار رہیں۔

مزید دیکھیں

متعلقہ مضامین