نواز شریف اسلام آباد کی اور عمران خان کراچی کی بیکری پہنچ گئے۔

آئندہ انتخابات قریب آتے ہی سیاستدان عوام سے پیار اور محبت کا ثبوت دینے کی بھرپور کوشش کر رہے ہیں ،جلسے جلوسوں کے ساتھ ساتھ
عوام سے گھلنے ملنے کی بھی بھرپور کوششیں جاری ہیں۔ دو روز قبل نواز شریف اسلام آباد کی مقامی بیکری پہنچے تو آج عمران خان نے بھی عوامی انداز اپناتے ہوئے کراچی کی بیکری کا اچانک دورہ کیا۔دو روزہ دورے پرکراچی میں موجود عمران خان کو نان اسٹاپ عوامی رابطہ مہم کے دوران بھوک نے ستایا توکراچی کی مقامی قیادت کے ہمراہ راہ چلتے نظر آنے والی بیکری ڈنکن ڈونٹس میں پہنچ گئے۔

کپتان کے بیکری میں پہنچتے ہی وہاں پر موجود شہری اچانک عمران خان کو اپنے درمیان پا کر بے حد خوش دکھائی دیئے،پھر اپنے اپنے خریدے ہوئے بیکری آیٹمز ایک سائڈ پر کھے اور موبائل فون نکال کر کپتان سے سیلفیوں کی فرمائش کر ڈالی۔کپتان بھی کراچی کی عوام کا پیار محبت دیکھ کر اچھے موڈ میں نظر آئے اور نا صرف وہاں موجود شہریوں کے ساتھ تصاویر بنوائیں بلکہ خود موبائل پکڑ کر سیلفیاں بنواتے نظر آئے۔

 

 

بیکری میں موجود خاتون سیلز گرل بھی کپتان کی مداح نکلی، سیلفی کی فرمائش کی تو کپتان اور سیلز گرل کے درمیان کاونٹر حائل ہو گیا،عمران خان نے خاتون سے موبائل پکڑا اور خود تصاویر بنائیں جس پر بیکری میں موجود پی ٹی آئی کے مداحوں نے کپتان کے حق میں خوب نعرہ بازی کی۔

دو روز قبل ایسی ہی دلچسپ صورت حال اس وقت اسلام آباد میں بھی دیکھنے کو ملی جب سابق نا اہل وزیر اعظم نواز شریف اپنی صاحبزادی مریم نواز کے ہمراہ بھی احتساب عدالت سے واپسی پر اچانک تہذیب بیکری پہنچے،نواز شریف کی آمد سے پہلے سکیورٹی کے کڑے انتظامات کئے گئے تھے جس کے باعث بیکری میں موجود شہری نواز شریف یا مریم نواز سے زیادہ گھل مل نہ سکے۔

نواز شریف کی بیکری میں خریدے گئے سموسے اور مٹھائی کا بل 18500روپے بنا تھا جبکہ کپتان نے معاملہ 3200روپے میں نمٹا دیا۔عمران دونوں رہنماوں کا بیکری میں قیام محض دس سے پندرہ منٹس کا تھا، قطع نظراس بات کے کہ شہریوں کو کس رہنماء کا انداز زیادہ پسندآیا دو حریف پارٹی کے سربراہوں کا عوام میں اس طرح نکلنا ایک خوش آئند قدم ہے۔

واضح رہے کہ عمران خان پہلے ہی اپنے عوامی انداز سے بے حد مقبولیت حاصل کر چکے ہیں ،راہ میں پھنسے ٹرک کو دھکا لگا کر ٹرک ڈرائیور کی مدد کرنا ہو یا لمبے سفر کے دوران کسی ڈھابہ ہوٹل پر بیٹھ کر عام لوگوں میں بیٹھ کر کھانا کھانا ہو،عمران خان یہ سب کچھ ایک لمبے عرصے سے کرتے چکے آ رہے ہیں۔ مگر اب دوسرے رہنماوں نے بھی عوامی انداز اپنانا شروع کیا ہے جسے بے حد مقبولیت مل رہی ہے۔

مزید دیکھیں

متعلقہ مضامین