کتنے بندے مارے؟ چیف جسٹس نے رپورٹ مانگ لی

چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں سڑکوں کی بندش سے متعلق از خود نوٹس کی سماعت کے دوران پنجاب میں پولیس مقابلوں کا بھی از خود نوٹس لیا۔ جسٹس ثاقب نثار نے آئی جی پنجاب کو حکم دیا کہ پچھلے ایک سال میں ہونے والے پولیس مقابلوں کی رپورٹ عدالت میں جمع کروائی جائے، جاننا چاہتے ہیں کہ پولیس مقابلوں مین کتنے بندوں کو مارا گیا۔انہوں نے آئی جی پنجاب کو حکم دیا کہ یہ رپورٹ سات دن کے اندر اندر جمع کروائی جائے۔

واضح رہے کہ سربراہ تحریک انصاف عمران خان پچھلے کچھ دنوں سے پنجاب پولیس کے سابق اور مفرور ایس ایچ او عابد باکسر کے ایک اعترافی بیان کا بار بار ذکر کر رہے ہیں جس میں وہ وزیراعلی پنجاب کی ہدایت پر جعلی پولیس مقابلوں کا اعتراف کر رہا ہے۔عابد باکسر کا یہ بیان تقریبا 3سال پرانا ہے لیکن عمران خان نے حالیہ جلسے میں چیف جسٹس ثاقب نثار سے معاملے کی تحقیقات کے لئے از خود نوٹس لینے کی اپیل کی تھی۔


عمران خان نے چیف جسٹس کے از خود نوٹس کا خیر مقدم کرتے ہوئے مقدمے میں فریق اور عدالت کی معاونت کا اعلان کر دیا۔عمران خان نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ شہباز شریف کی ایما پر پنجاب میں جعلی پولیس مقابلوں کا ریکارڈ خوفناک ہے،پی ٹی آئی مورائے عدالت قتل کئے جانے والوں کے لواحقین کے ساتھ ہے۔

چیف جسٹس نے کراچی میں پولیس مقابلے کے دوران شہری نقیب اللہ کو قتل کئے جانے کے بعد راو انوار کی جانب سے پولیس مقابلوں کی رپورٹ بھی طلب کی تھی

مزید دیکھیں

متعلقہ مضامین