حکومت نے5سال میں 36ارب80کروڑ ڈالر قرضہ لے لیا

اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی جانب سے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق پاکستان پر ملکی و غیر ملکی قرضوں کی رقم 6700 کھرب روپے تک پہنچ چکی ہے ۔حکومت کو اگلے چھہ ماہ میں 4ارب 30کروڑ ڈالر کی ادائیگیاں کرنا ہیں،جن میں 3 ارب 30کروڑ روپے اصل رقم جبکہ1ارب 1کروڑ ڈالر سود کی مد میں ادا کرنا ہے۔ذرائع وزارت خزانہ کے مطابق پاکستان اس وقت چین ، جاپان،جرمنی،فرانس،امریکہ اور سعودی عرب کا1ارب63کروڑ ڈالر کا مقروض ہے

۔پاکستان نے پچھلے 5سال کے دوران 36ارب80کروڑ ڈالر قرضہ لیا ہے۔بڑے قرضوں میں غیر ملکی کمرشل بینکوں سے 7ارب20کروڑ ڈالر اور عالمی بینک سے لئے گئے 5ارب80کروڑ ڈالر کی رقم شامل ہے۔ایشیائی ترقیاتی بینک سے 14ارب40کروڑ ڈالر کا قرض لیا گیا جس کے بعد بیرونی قرضوں کا کل حجم70ارب36کروڑ ڈالر تک پہنچ گیا۔اسٹیٹ بینک ویب سائٹ کے مطابق پاکستان کا اندرونی قرضہ105ارب ڈالر یعنی 3600کھرب روپے ہے۔

ذرائع وزارت خزانہ نے تصدیق کی ہے کہ نپاکستان کو اگلے چھ ماہ میں بانڈزکی مد میں 31کروڑ ڈالر صرف سود کی مد میں ادا کرنا ہیں ،اسلامک بینک کو 39کروڑ ڈالر کا مختصر مدتی قرض بھی واپس کیا جانا ابھی باقی ہے۔جبکہ دوسری جانب عالمی بینک،اے ڈی بی،اوپیک،ای سی اواور ڈیفیڈ کو بھی 1ارب30کروڑ ڈالر کی رقم واجب الادا ہے۔

مزید دیکھیں

متعلقہ مضامین