عمران خان بین الاقوامی میڈیا میں امریکی دھمکیوں کا جواب دیں گے

پاکستان کیخلاف امریکی ہرزہ سرائی پر عمران خان نے پارٹی رہنماوں کے ہمراہ قومی اور بین الاقوامی میڈیا میں امریکی بیانیے کی مخالفت کا فیصلہ کر لیا۔فیصلہ تحریک انصاف کی پارٹی قیادت کے ہنگامی اجلاس کے دوران امریکی صدر کے پاکستان سے متعلق حالیہ بیان کے بعد پیدا شدہ صورت حال کا تفصیلی جائزہ لینے کے بعد کیا گیا۔عمران خان نے اجلاس کے دوران پارٹی کو عالمی سطح پر پاکستان کی قربانیوں کو اجاگر کرنے کی ہدایت کر دی۔عمران خان نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف پاکستان نے جنگ لڑی اسے دنیا کو بتایا جائے،

اجلاس کے دوران حکومت سے مطالبہ کیا گیا کہ پاکستان میں سفارتی عملے زائد موجود امریکیوں کو فوری طور پر ملک سے بے دخل کیا جائے۔تحریک انصاف کی قیادت نے ٹرمپ کے بیان کے بعد روزنامہ جنگ کی جانب سے لندن ایڈیشن میں پاکستان سے متعلق چھاپی گئی اشتعال انگیز شہ سرخی کی شدید مذمت کرتے ہوئے جیو اور جنگ کے مالک میر شکیل ارحمن کے خلاف تمام ممکنہ قانونی فورمز پر کارروائی کا فیصلہ کیا۔عمران خان نے کہا کہ روزنامہ جنگ نے قوم کے جذبات مجروح کئے، صحافی تنظیمیں اخبار کے مالک میر شکیل ارحمن سے وضاحت طلب کریں۔

عمران خان نے اجلاس کے دوران نواز شریف کی ریاستی اداروں پر الزامات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ڈونلڈ ٹرمپ اور نواز شریف کا بیانیا مشترک ہے ،ٹرمپ خارجی اور نواز شریف داخلی طور پر پاکستان پر دباو¿ بڑھا رہے ہیں جس کے نتائج نقصان دہ ہوں گے۔عمران کان نے واضح کیا کہ تحریک انصاف ملکی داخلی و سلامتی کی صورت حال سمیت حکومتی طرز عمل پر بھرپور نظر رکھے ہوئے ہے

مزید دیکھیں

متعلقہ مضامین