پاکستان کو امداد دے کر امریکہ نے غلطی کی، امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک بار پھر بے بنیاد الزامات کے ذریعے پاکستان کو نشانے پر رکھ لیا۔اپنے ٹویٹر پیغام میں امریکی صدر نے کہا کہ پاکستان کو 15سال میں 33ارب ڈالرز امداد دے کر امریکہ نے غلطی کی، جس کے جواب میں پاکستان نے امریکا سے جھوٹ بولنے اور دھوکہ دینے کے سوا کچھ نہیں کیا،جن دہشت گردوں کو امریکہ تلاش کرتا رہا، پاکستان نے انہیں محفوظ پنگاہیں دیں،امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے ٹویٹ میں پاکستان کی امداد بند کرنے کی دھمکی دیتے ہوئے کہاکہ اب ایسا نہیں ہوگا، پاکستان کو امریکہ سے کوئی مالی مدد نہیں ملے گی۔


ڈونلڈ ٹرمپ کی ٹویٹ کے بعد پاکستان کا بھی سخت رد عمل سامنے آیا،امریکہ کو کرارا جواب دیتے ہوئے وزیر دفاع خواجہ آصف نے جوابی ٹویٹ میں کہا امریکی صدر کی دھمکیوں کا بھرپور جواب دیں گے،دنیا کو بتائیں گے کہ حقیقت کیا ہے اور افسانہ کیا

امریکی صدر کے بیان کے بعد ان کی دوغلی پالیسی کھل کر سامنے آ گئی، ڈھائی ماہ پہلے پاکستان کی جانب سے دہشت گردی کے خلاف معاونت فراہم پر پاکستان کے گن گا چکے ہیں،اپنے ٹویٹر پیغام میں امریکی صدر نے کہا تھا کہ کئی معملات میں پاکستان کی جانب سے تعاون کرنے پر ان کے شکر گزار ہیں، پاکستان کے ساتھ تعلقات بہتر بنا کر آگے بڑھیں گے

دوسری جانبپاک فوج پہلے ہی امریکہ کے ڈومور کے جواب میں نومورکا بھرپور جواب دے چکی ہے، ترجمان پاک فوج نے اپنی پریس کانفرنس میں پہلے ہی واضح کر دیا تھا کہ اب جو کچھ کریں گے پاکستان کے لئے ہو گا، امریکہ کی خواہش یا مرضی کے مطابق نہیں،پاکستان امریکہ کے پیسے نہیں دہشت گردی کے خلاف جنگ میں قربانیوں کاعتراف چاہتا ہے۔

دوسری جانب ملک بھر میں امریکی صدر کے بیان پر سخت غم و غصہ کا اظہار کیا جا رہا ہے، 33ارب ڈالر ز امداد کا طعنہ دینے والا امریکہ یہ کیوں نہیں جانتا کہ پاکستان نے اسی کی خاطر جنگ لڑتے ہوئے 70ہزار پاکستانیوں کی جانوں کی قربانی دی،جبکہ 100ارب ڈالر ز کا نقصان اٹھایا ہے۔تجزیہ کاروں کے مطابق امریکی صدر کی دھمکی کے پاکستان کو بھرپور اور جارحانہ موقف اپناتے ہوئے سخت جواب دینا ہو گا

مزید دیکھیں

متعلقہ مضامین