قصہ پاکستان کے سادہ منش وزیراعظم کی سالگرہ کا!

پاکستان کے موجودہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اپنی سادہ طبعیت کے باعث بھی کافی مشہور ہیں۔ایسے ہی کچھ مناظر آج دیکھنے کو ملے جب انہوں نے اپنی 59ویں سالگرہ انتہائی سادگی کے ساتھ منائی۔کندھوں پر گرم شال اوڑھے بیٹھے تھے کہ ان کے چھوٹے صاحبزادے ان کی سالگرہ کا کیک لئے ان کے پاس پہنچ گئے۔سادہ منش وزیراعظم نے سالگرہ کا کیک کاٹا اور بیٹے کو بھی کھلایا۔ان کی بیٹے نے اس موقع پر کھینچی گئی تصویر اسلام آباد میں اپنے دوست اور صحافی شاکر عباسی کو واٹس ایپ پر بھجوائی۔ تصویر میں وزیراعظم کی سادگی دیکھ کر شاکر عباسی اور پاس موجود کچھ صحافی دوست کافی متاثر ہوئے اور پھر دیکھتے ہی دیکھتے یہ تصویر پاکستانی میڈیا میں بریکنگ نیوزکی زینت بننے لگی۔ہالینڈ اور کینیڈا سمیت دیگر ملکوں کے وزیراعظم کی سادگی کی تصاویر پاکستانی سوشل میڈیا پر مقبول ہو سکتی ہیں تو اپنے وزیراعظم کی کیوں نہیں؟؟ 27دسمبر1958کو کراچی میں پیدا ہونے والے شاہد خاقان عباسی کامیاب بزنس مین بنے اور پھر وزیراعظم پاکستان، ہائی پروفائل شخصیت ہونے کے باوجود بہت زیادہ نہ سہی مگر کافی حد تک ان کی جانب سے اپنائی جانے والی سادگی نے بہت سے لوگوں کو متاثر کیا ہے۔دوسری جانب صرف ایک روز پہلے 25دسمبر کو پاکستان کے سابق وزیر اعظم نواز شریف کی بھی سالگرہ تھی ۔اس موقع پر ان کی صاحبزادی مریم نواز کی جانب سے ٹویٹر پر کچھ تصاویر جاری کی گئی جن میں شیر کی مشابہت والے درجنوں کیک محل میں سجائے گئے تھے۔ان تصاویر پر تنقید کی جا سکتی ہے مگر اس بار تعمیری پہلو پر بات کرتے ہوئے یہ سمجھنا مشکل نہین کہ یہ کیک نواز شریف کے چاہنے والوں کی جانب سے بھجوائے گئے تھے۔ مگرسوال صرف اتنا ہے کہ ان تصاویر کی سوشل میڈیا پر نمائش کی ضرورت کیوں پیش آئی۔ کیا سینکڑوں پاونڈ وزنی کیک کی تصاویر دکھانے سے ہی عوام کے دل میں نواز شریف کی محبت ڈالی جا سکتی تھی یا شاہد خاقان عباسی جیسی کوئی مثال رائے ونڈ کے محل میں بھی قائم ہو سکتی ہے؟؟؟

مزید دیکھیں

متعلقہ مضامین