عمران خان کی حکومت کو دی گئی ڈیڈ لائن 5 منٹ میں ختم ہو گئی

سربراہ تحریک انصاف عمران خان فاٹا کے خیبر پختون خواہ میں انضمام کا معاملے پر حکومت کے تاخیری حربوں پر برہم ہو گئے! صبر کا پیمانہ اس قدر لبریز ہوا کہ حکومت کو فاٹا انضمام کے لئے ڈیڈ لائن دینے کا فیصلہ کر لیا! عمران خان نے پارٹی رہنماء مراد سعید کو بنی گالا بلایا اور حکومت مخالف سخت حکمت عملی اپنانے کی ہدایت کر دی! عمران خان نے حکومت کو قومی اسمبلی کے جاری اجلاس کے اختتام تک مہلت دیتے ہوئے کہا کہ حکومت قومی اسمبلی کا رواں سیشن ختم ہونے سے پہلے پہلے فاٹا انضمام سے متعلق فیصلہ کرے بصورت دیگر پیش رفت نہ ہونے پر حکومت کو شدید ردعمل برداشت کرنا ہوگا، عمران خان نے مراد سعید کو ہدایت کی کہ قومی اسمبلی کے جاری سیشن سیشن کے دوران ہر روز پی ٹی آئی کے پارلیمانی رہنماء پارلیمان کے دونوں ایوانوں میں بھرپور آواز اٹھائیں! عمران خان کی حکومت کو دی گئی ڈیڈ لائین ٹھیک 5 منٹ بعد اس وقت ختم ہو گئی جب قومی اسمبلی کا جاری اجلاس کورم پورا نہ ہونے پر غیر معینہ مدت تک کے لئے ملتوی کر دیا گیا! عمران خان کا خیال تھا کہ قومی اسمبلی کا اجلاس کم سے کم 31دسمبر تک جاری رہے گا, اور اس دوران ایوان میں شور شرابے یا احتجاج کے ذریعے حکومت پر دباو بڑھایا جا سکے گا! مگر ایسا نہ ہو سکا اور عمران خان کا بیان جاری ہونے کے ٹھیک 5 منٹ بعد ہی قومی اسمبلی کا رواں سیشن اختتام پذیر یو گیا! دلچسپ صورت حال یہ ہے کہ عمران خان کی جانب سے مہلت ختم ہونے پر حکومت سے کسی قسم کی نرمی نہ برتنے کا اعلان بھی کیا چکا ہے! اب ایسی صورت حال میں تحریک انصاف کیا لائحہ عمل اپنائے گی یہ دیکھنا ہو گا! دوسری جانب عمران خان پختون خواہ اور فاٹا کے انضمام کے لئے کسی قسم کی لچک دکھانے کو تیار نہیں! اگر حکومت نے جلد کوئی عملی قدم نہ اٹھایا تو تحریک انصاف جلد کسی بڑے احتجاج کا اعلان کر سکتی ہے

مزید دیکھیں

متعلقہ مضامین