عمران خان کے قافلے پر حملہ، اور خصوصی مناظر

عمران خان کے قافلے پر سابق وزیراعظم یوسف رضاگیلانی کے صاحبزادے علی موسی گیلانی کے محافظوں نے اس وقت حملہ کر دیا جب عمران خان ساتھیوں سمیت اوکاڑہ جلسے سے اسلام آباد واپس جا رہے تھے۔ اس دوران دو تیز رفتار لینڈ کروزرز نے عمران خان کے قافلے میں زبردستی شامل ہونے کی کوشش کی اور اس دوران کپتان کے قافلے میں شامل گاڑیوں پر فائرنگ کر دی۔

تحریک انصاف کے مطابق حملہ اور فائرنگ سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کے بیٹھے موسی گیلانی کی جانب سے کی گئی جو کھلی دہشت گردی ہے، فائرنگ کے نتیجے میں عمران خان کے قافلے کے پیچھے موجود گاڑی فائرنگ کی زد میں آئی، تحریک انصاف کے رہنما فیصل جاوید گاڑی میں سوار تھے جو گاڑی بلٹ پروف ہونے کے باعث جانی نقصان سے محفوظ رہے۔

پی ٹی آئی کے مطابق موسیٰ گیلانی AFF-148 نمبر کی لینڈ کروزر میں سوار تھے، جبکہ ان کے ساتھ دوسری لینڈ کروزر کا نمبر BD-7098 تھا۔ واقع کے بعد عمران خان ساتھیوں سمیت محفوظ مقام پر منتقل ہوئے اورساتھیوں سمیت گاڑیوں سے باہر نکل آئے۔

عمران خان نے حواس برقرار رکھے اور ساتھیوں سے واقع سے متعلق بات چیت کی اور کوئی جانی نقصان نہ ہونے پراللہ کا شکر ادا کیا ۔

تحریک انصاف کی جانب سے علی موسی گیلانی کے خلاف واقعے کا مقدمہ درج کرانے کا اعلان کر دیا ہے۔دوسری جانب علی موسی گیلانی نے واقع میں اپنے کسی بھی قسم کے کردار کی تردید کرتے ہوئے حقائق بتانے کے لئے پریس کانفرنس طلب کر لی ہے

مزید دیکھیں

متعلقہ مضامین