نواز شریف ، عمران خان ایک ہی دن عدالت طلب

اسلام آباد (ذوالقرنین حیدر) عمران خان اسلام آباد کی انسداد دہشت گردی کی عدالت میں چار مقدمات میں عبوری ضمانت کے لئے پیش ہوئے تو عدالت کے جج نے سماعت مکمل کرتے ہوئے عمران خان کو 19دسمبر کو دوبارہ طلب کر لیا ، یہ فیصلہ عین اس وقت سامنے آیا جب اسی عمارت کے دوسرے حصہ میں قائم احتساب عدالت میں شریف خاندان ریفرنس کیس کی سماعت جاری تھی ۔احتساب عدالت میں سماعت مکمل ہوئی تو شریف خاندان کے وکیل خواجہ حارث اور نیب کے پراسیکیوٹر کی جانب سے بھی اگلی پیشی کے لئے 19دسمبر کے دن پر اتفاق کیا گیا جسے مانتے ہوئے احتساب عدالت نے نواز شریف ،مریم نواز اور کیپٹن صفدر کو 19دسمبر کو طلب کر لیا۔19دسمبر کا دن اب انتہائی اہم سمجھا جا رہا ہے کیونکہ دو حریف سیاسی جماعتوں کے سربراہ ایک ہی دن ایک ہی بلڈنگ کی دو مختلف عدالتوں میں پیش ہونے جا رہے ہیں۔

دونوں رہنماء ایک ہی راستے سے اس کمپلیکس میں داخل ہو ں گے ، لیکن کپتان کا رخ انسداد دہشت گردی عدالت کی طرف ہو گا جبکہ میاں صاحب احتساب عدالت کی جانب بڑھیں گے۔ اس ساری صورت حال میں عمران خان ،نواز شریف اور مریم نواز کی آمد کا وقت بھی ایک ہوا تو عمران خان کا نواز شریف سے آمنا سامنا یا ٹاکرا ہو سکتا ہے

اس حوالے سے پولیس حکام نے بھی تمام تر صورت حال کو مد نظر رکھتے ہوئے سکیورٹی انتہائی سخت کرنے کا فیصلہ کیا ہے، کیونکہ دونوں جماعتوں کے کارکنان کی بڑی تعداد احتساب عدالت کا رخ کر سکتی ہے جس کے آمنے سامنے آنے کی صورت میں تصادم کا خدشہ بڑھ سکتا ہے ۔اس سلسلے میں19دسمبر کو پولیس کی بھاری نفری تعینات کر کے کارکنان کو احتساب عدالت دور رکھنے کی منصوبہ بندی بھی زیر غور ہے

مزید دیکھیں

متعلقہ مضامین