پاکستان میں اسامہ بن لادن کی موجودگی ! اوبامہ نے سچ بول دیا

اسامہ بن لادن کی ہلاکت کے ساڑھے 6برس بعد سابق امریکی صدر باراک اوبامہ نے اہم راز سے پردہ فاش کر دیا۔بھارت میں لیڈر شپ سمٹ سے خطاب کے دوران باراک اوبامہ نے اعتراف کیا کہ پاکستان اسامہ بن لادن کی اپنے ملک میں موجودگی سے لا علم تھا۔ سابق امریکی صدر نے کہا کہ تحقیق کے باوجود ایسے ثبوت یا شواہد نہیں مل سکے جن کی بنا پر یہ کہا جاتا کہ اس وقت کی حکومت پاکستان اسامہ بن لادن کی موجودگی سے با خبر تھی۔

سوال جواب کے سیشن کے دوران اوبامہ نے کہا کہ پاکستان امریکہ کا بہترین اتحادی ہے جس نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں بڑی قربانیاں دی ہیں۔باراک اوبامہ کا اسامہ بن لادن اور پاکستان سے متعلق یہ بیان دنیا بھر کی شہ سرخیوں کا حصہ بن گیا۔آج سے تقریبا ساڑھے 6برس قبل 2مئی 2011کی تاریک رات میں امریکی فورسز کی جانب سے پاکستان کے علاقے ایبٹ آباد میں خفیہ آپریشن کیا گیا ۔

آپریشن کے نتیجے میں امریکہ کی جانب سے اسامہ بن لادن کے مارے جانے کی تصدیق کی گئی۔امریکی آپریشن کے باعث اس وقت کی پاکستانی حکومت کو اندرونی و بیرونی شدید دباو کا سامنا کرنا پڑا۔دنیا میں تاثر دیا گیا کہ پاکستان نے اسامہ بن لادن کو محفوظ ٹھکانہ فراہم کیا ۔

دفاعی تجزیہ کاروں کے مطابق 6برس بعد باراک اوبامہ کی جانب سے یہ اعترافی بیان پاکستان کے لئے کسی بیل آوٹ پیکج سے کم نہیں۔واضح رہے کہ اسامہ بن لادن کی ہلاکت سے متعلق کوئی ویڈیو یا تصویری ثبوت امریکہ تا حال منظر عام پر نہیں لایا جبکہ ایبٹ آباد واقعے کی تحقیقات کے لئے پاکستان میں بھی اعلی سطحی تحقیقاتی کمیشن قائم کیا گیا جس کی رپورٹ تا حال منظر عام پر نہیں لائی گئی

مزید دیکھیں

متعلقہ مضامین