طالب علموں پر طالبان کا حملہ

خیبرپختونخوا ہ کے دارالحکومت پشاور میں دہشت گردوں کی کاروائی ،زرعی یونیورسٹی کے ڈائریکٹوریٹ پر حملے کے نتیجے میں 9افراد شہید جبکہ 20زخمی ہوگئے۔جمعہ کی صبح آٹھ بج کر پینتالیس منٹ پر تین دہشت گرد یونیورسٹی میں داخل ہوئے اور سامنے نظر آنے والے طالب علموں پر گولیاں بر سا دیں۔ واقع کی اطلاع ملتے ہی خیبر پختون خواہ پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں نے زرعی تربیت گاہ کا محاصرہ کر کے فوری آپریشن شروع کیا جس کے نتیجے میںتمام حملہ آور ہلاک کر دیئے گئے ۔

پولیس ذرائع کے مطابق تین برقع پوش افراد رکشے میں بیٹھ کر یونیورسٹی میں داخل ہوئے جس کے تھوڑی دیر بعدفائرنگ شروع ہو گئی۔حملہ آوروں نے سب سے پہلے عمارت کے داخلی دروازے پر موجود چوکیدار کو نشانہ بنایا جس کے بعد عمارت میں داخل ہو کر طلباءکو نشانہ بنایا گیا۔دوسری جانب کالعدم شدت پسند تنظیم تحریکِ طالبان پاکستان نے صحافیوں کوبھیجے جانے والے ایک بیان میں حملے کی ذمہ داری قبول کر لی ہے۔

ترجمان پاک فوج میجر جنرل آصف غیور نے میڈیا سے گفتگو میں بتایا کہ حملہ آوروں کے خلاف فوری کاروائی شروع کرتے ہوئے علاقے کی فضائی نگرانی سمیت حملہ آوروں کے خلاف بھرپور آپریشن کیا گیا۔ پاک فوج نے واقعے کے دوران خیبر پختون خواہ پولیس کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ کے پی کے پولیس نے مثالی کارکردگی کا مظاہرہ کیا جس کے نتیجے میں دہشتگردوں کو کم سے کم وقت میں مارا گیا۔

مزید دیکھیں

متعلقہ مضامین